An official website of the United States Government Here's how you know

Official websites use .gov

A .gov website belongs to an official government organization in the United States.

Secure .gov websites use HTTPS

A lock ( ) or https:// means you’ve safely connected to the .gov website. Share sensitive information only on official, secure websites.

وائٹ ہاؤس
واشنگٹن، ڈی سی
10 دسمبر 2021

ساؤتھ کورٹ آڈیٹوریم
سہ پہر 1:57 ای ایس ٹی

صدر: جمہوریت کے اس سربراہی اجلاس میں شرکت کے لیے اور ان مشترکہ اقدار کے لیے جو ہماری قومی اور بین الاقوامی طاقت کی جڑ ہے آپ سب کی لگن کی تجدید کے لیے آپ کا شکریہ۔

اس اجتماع سے قبل اور گزشتہ دو دنوں کے دوران ہم نے دنیا کے ہر خطے سے حکومتی رہنماؤں کے ساتھ ساتھ جمہوری اصلاح کاروں کو بھی جمہوریت کو درپیش چیلنجوں اور اس کی تجدید کے مواقع کے بارے میں بات کرتے ہوئے سنا۔

ہم نے میسا، ایریزونا سے لے کر مینہیم، جرمنی تک دنیا بھر کے میئروں اور اُن دوسرے رہنماؤں کے مابین بات چیت اور رابطوں میں سہولتیں فراہم کیں جو مقامی حکومتوں کے ذریعے جمہوریت کی طاقت کا مظاہرہ کرنے والوں کی اگلی صفوں میں موجود رہتے ہیں۔

ہم نے میڈیا کی آزادی کے تحفظ کی اہمیت پر اور اس بات پر روشنی ڈالی کہ عورتوں اور لڑکیوں کی حیثیت کو فروغ دینا ہماری جمہوریتوں کی کامیابی میں کس طرح ایک سرمایہ کاری کی حیثیت رکھتا ہے۔

اور ہم نے انسانی حقوق کے محافظوں کو بااختیار بنانے کی ضرورت پر توجہ مرکوز کی اور اس بات کو یقینی بنایا کہ اُس ٹیکنالوجی کو جو ہماری زندگیوں کو بہت آسان بناتی ہے جمہوریت کو آگے بڑھانے اور لوگوں کو اوپر اٹھانے کے لیے استعمال کیا جائے نہ کہ انہیں دبانے کے لیے استعمال کیا جائے۔

ہم نے نوجوانوں کے خدشات سنے۔ کسی بھی دوسرے فریق کی نسبت مستقبل میں اُن کا بہت کچھ داؤ پر لگا ہوا ہے۔ انہوں نے یہ واضح کیا کہ ان کے لیے سب سے اہم چیزکیا ہے اور یہ یقینی بنانا کتنا ضروری ہے کہ ان کی آوازیں ہماری جمہوریتوں میں شامل ہوں۔

اور گو کہ ہم سب کے ممالک کو منفرد چیلنجوں کا سامنا ہے اوربہت سے مخصوص حالات مختلف ہیں مگر ہمیں جن خطرات کا سامنا ہے اور ہمیں جو حل تلاش کرنے ہیں ان کی ایک پیشگی شرط ہے۔ وہ یہ ہے کہ یہ کوئی ایسی جدوجہد نہیں ہے جس کا کسی فردِ واحد کو اکیلے سامنا کرنا ہے بلکہ یہ ہم سب کی جدوجہد ہے۔

اور آمریت کی مخالفت، بدعنوانی کے خلاف جنگ، سب لوگوں کے انسانی حقوق کے فروغ کے جو وعدے ہم نے اپنے آپ سے، اپنے لوگوں سے، اور ایک دوسرے سے کیے ہیں وہ نہ صرف ہماری جمہوریتوں کو مضبوط بنائیں گے بلکہ اُن سے دنیا بھر میں جمہوریت کے پھلنے پھولنے کے لیے زرخیز زمین کے بونے میں مدد بھی ملے گی۔

میری اُس توانائی اور جوش سے بہت حوصلہ افزائی ہوئی ہے جو اپنی مشترکہ جمہوری اقدار کی حمایت میں دنیا بھر کے لوگوں کو اکٹھا کرنے میں دیکھنے میں آیا ہے۔

ذرا اس ایک مثال کو دیکھیے۔ اِس سربراہی اجلاس سے قبل پورے خطے میں شفافیت، انسانی حقوق، اقتصادی ترقی، اور جمہوریت کو مضبوط بنانے کی خاطر تعاون کرنے کے لیے پانامہ، کوسٹا ریکا اور ڈومینیکن ریپبلک کے صدور نے، اُن کے الفاظ میں، “جمہوری اداروں کو مضبوط بنانے کے لیے ایک اتحاد” تشکیل دیا۔

جب ہم اس مسئلے کوعملی کاروئی کے اگلے سال میں لے کر جائیں گے تو مجھے امید ہے کہ اسی قسم کے ہمیں مزید متاثر کن عزائم اور شراکت داریاں دیکھنے کو ملیں گیں۔

اور میں امید کرتا ہوں کہ ہم سب کے ملک اپنی اپنی کاوشوں کی کامیابیوں کا شمار کریں گے تاکہ ہم اگلے سال جمہوریت کے دوسرے سربراہی اجلاس میں اپنی پیش رفت کے بارے میں رپورٹ پیش کر سکیں۔ مجھے امید ہے کہ اُس وقت میں آپ سب کا بالمشافہ طور پر استقبال کر سکوں گا۔

جیسا کہ میں نے گزشتہ روز کہا کہ لوگوں کے نزدیک سب سے زیادہ اہمیت کے حامل مسائل کے حل میں جمہوریت کی کامیابی کو ثابت کرنے کے لیے، اپنے طور پر امریکہ کے اندر ہم اپنی جمہوریت کو مضبوط کرنے اور دنیا بھر کے شراکت داروں کے ساتھ مل کر کام کرنے کے لیے پرعزم ہیں۔

یہاں اپنے ملک میں اس کا مطلب امریکہ کے خواب کو حقیقت کا روپ دینے پر کام کرنا ہے اور اس میں ووٹ دینے کی آزادی کا قانون اور ووٹ دینے کے فروغ کے لیے جان لوئس کا قانون شامل ہیں۔

اس کی وجہ یہ ہے کہ جو سچ پوری دنیا میں ہے وہی سچ امریکہ میں بھی ہے۔ ووٹ ڈالنے کا مقدس حق، آزادانہ طور پر ووٹ ڈالنا، اپنے ووٹ کی گنتی کا حق، ہر جمہوریت کی آزادی کا کم از کم معیار ہے۔ اس کے ہوتے ہوئے ہر ایک چیز ممکن ہے۔ اس کی عدم موجودگی میں کم و بیش کوئی چیز بھی ممکن نہیں۔

ہمیں اکٹھے مل کر بیٹھنا ہوگا اور یہ کام ختم کرنا ہوگا۔ اور ہم یہ کام کریں گے۔

امریکہ زندگیاں بچانے، کووڈ-19 کی ویکسینیں لگانے اور پوری دنیا کے لوگوں کی صحت کی سلامتی کو فروغ دینے کی خاطر صحت کی عالمی تنظیم، کوویکس اور دیگر شراکت داروں کے ساتھ مل کر اس وبائی مرض کو شکست دینے کی اپنی کوششیں جاری رکھے گا۔

ہم ویکسینیں تیار کرنے کی اپنی مشترکہ استعداد کو بڑہانے اور لوگوں تک ویکسینیں پہنچانے اور پوری دنیا میں سب کو [کورونا ویکسین کے] ٹیکے لگانے میں مدد کرنے کے لیے جی سیون اور کواڈ جیسی اپنی شراکت داریوں سے فائدہ اٹھا رہے ہیں۔

ہم آب و ہوا کے بحران کا سنجیدگی کے ساتھ اور فوری طور پر مقابلہ کر رہے ہیں۔ ہم ابہام سے پاک ایسی اخلاقی سوچ سے اس کا مقابلہ کر رہے ہیں جو ہمیں دنیا بھر کے نوجوانوں کی طرف سے آتی ہوئی دکھائی دے رہی ہے۔

ہم اُن جمہوری اقدار کی توثیق کر رہے ہیں جو ہمارے بین الاقوامی نظام کا محور ہیں اور جو دہائیوں سے عالمگیر ترقی اور خوشحالی کی بنیادوں کا کام کرتی چلی آ رہی ہیں۔

اور ہم ان تمام لوگوں کے ساتھ مل کر کام کرنے کا عزم کیے ہوئے ہیں جو اِن اقدار میں ہمارے ساتھ شریک ہیں تاکہ سائبر سکیورٹی اور ابھرتی ہوئی ٹکنالوجیوں سمیت اِس راہ کے اُن اصولوں کو طے کیا جا سکے جو اکیسویں صدی میں ہماری ترقی کو کنٹرول کریں گے۔ اس کا مقصد یہ ہے کہ ہماری طرح آنے والی نسلیں بھی آزادی اور جمہوریت کے ثمرات سمیٹتی رہیں۔

ایسے میں جب ہم جمہوریت کے پہلے سربراہی اجلاس کے اختتام کی طرف بڑھ رہے ہیں میں جو آخری پیغام دینا چاہتا ہوں وہ یہ ہے کہ ہم جانتے ہیں کہ آگے کا کام کتنا مشکل ہے، لیکن ہم یہ بھی جانتے ہیں کہ ہم اِس چیلنج کا مقابلہ کر سکتے ہیں۔

اس کی وجہ یہ ہے اور جیسا کہ میں پہلے بھی کہہ چکا ہوں اور جیسا کہ اس اجتماع نے عملی طور پر ثابت بھی کیا ہے جمہوری دنیا ہر کہیں موجود ہے۔

آمریتیں آزادی کے اُس انگارے کو نہیں بجھا سکتیں جو دنیا کے ہر کونے میں پوری دنیا کے لوگوں کے دلوں میں دہک رہا ہے۔

یہ سرحدوں سے نا آشنا ہے۔ یہ ہر زبان بولتا ہے۔ یہ انسداد بدعنوانی کے سرگرم کارکنوں، انسانی حقوق کے محافظوں، ​​صحافیوں، [اور] اُن پرامن مظاہرین میں رہتا ہے جو پوری دنیا میں کی جانے والی جدوجہد کی اگلی صفوں میں موجود ہیں۔

یہ ٹاؤن کونسل کے اجلاسوں، یونینوں کے انتخابات اور روزمرہ کے اُن چھوٹے چھوٹے کاموں میں پایا جاتا ہے جو پوری دنیا میں اُس وقت کیے جاتے ہیں جب کبھی لوگ مسائل کو حل کرنے اور اختلاف مٹانے کے لیے جمع ہوتے ہیں۔ [اسی طرح] یہ ان تمام طریقوں میں بھی ملتا ہے جن کے ذریعے سول سوسائٹی اُن مسائل پر برائے راست بات کرنے کے لیے افراد کو با اختیار بناتی ہے جو اُن کی زندگیوں اور اُن کی شخصیت پر اثر انداز ہوتے ہیں۔ جمہوریت کا دفاع پورے معاشرے کی کوششوں کا تقاضہ کرتا ہے۔ اس کے لیے ہم سب کی ضرورت ہے۔

حکومتی لیڈروں کی حیثیت سے اپنے شہریوں کی بات سننا، جمہوریت کے حفاظتی پشتوں کو مضبوط بنانا اور ایسی اصلاحات لانا ہماری ذمہ داری بنتی ہے جو شفاف اور احتساب کی حامل حکمرانی کو آمرانہ قوتوں کے تابڑ توڑ حملوں اور عوامی فلاح پر اقتدار کے ننگے تعاقب کو ترجیح دینے کے خلاف لچکدار بناتی ہیں۔

آپ جانتے ہیں کہ ہمیں نجی شعبے کے ساتھ مل کر بدعنوانی کا مقابلہ کرنا ہوگا اور ایسی مزید مساوی معیشتیں کھڑی کرنا ہوں گی جن سے زیادہ سے زیادہ لوگ مستفید ہو سکیں۔ ہمیں اپنے شہریوں کو بااختیار بنانا ہوگا تاکہ وہ ہمیں اپنے اعلیٰ ترین آدرشوں کے حساب سے جوابدہ ٹھہرا سکیں اور اس بات کو یقینی بنا سکیں کہ ہمارے قول اور فعل میں مطابقت ہو۔ اور اب جب کہ ہم اس پہلے اجتماع کے اختتام کی طرف بڑھ رہے ہیں آئیے ہم مل کر اپنے اس عزم کا اعادہ کریں کہ مستقبل اُن لوگوں کا ہو جو انسانی وقار کو گلے لگاتے ہیں نہ کہ اُن کا جو اسے پامال کرتے ہیں؛ اُن کا ہو جو اپنے لوگوں کی صلاحیتوں کو مکمل طور پر بے لگام کر دیتے ہیں نہ کہ اُن کا جو اِن صلاحیتوں کا گلہ گھونٹتے ہیں، اور اُن کا ہو جو اپنے لوگوں کو آزاد فضا میں سانس لینے کی اہلیت دیتے ہیں نہ کہ اُن کا جو آہنی ہاتھوں سے اپنے عوام کا گلہ دبانے کی کوشش کرتے ہیں۔

جیسا کہ عظیم آئرش شاعر سیمس ہینی نے لکھا:

“… زندگی میں ایک بار،
انصاف کی تڑپ کا مدوجزر
جب اٹھتا ہے،
تو امید اور تاریخ ہمنوا بن جاتے ہیں۔”

مدوجزر غیب سے نہیں اٹھتے۔ یہ حادثاتی طور پر رونما نہیں ہوتے۔

مدوجزر تب اٹھتا ہے جب لوگ اپنی خوابوں اور عزم صمیم کی بے اختیار طاقتوں کو بے لگام کر دیتے ہیں۔

جمہوریت ہی وہ چیز ہے جو امید اور تاریخ کو ہمنوا بناتی ہے۔

اور آج امید اور تاریخ ہمارے ہاتھوں میں ہیں.

آئیے مل کر اِن چیلنجوں کا مقابلہ کرنے کے لیے اٹھیں۔

آپ کا شکریہ اور میں اُن تمام وعدوں پر عمل کرنے کا متمنی ہوں جو ہم اس برس انفرادی طور پر کر رہے ہیں۔ آپ کا شکریہ


اصل عبارت پڑھنے کا لِنک : https://www.whitehouse.gov/briefing-room/speeches-remarks/2021/12/10/remarks-by-president-biden-at-the-summit-for-democracy-closing-session/

یہ ترجمہ ازراہ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔

U.S. Department of State

The Lessons of 1989: Freedom and Our Future