An official website of the United States Government Here's how you know

Official websites use .gov

A .gov website belongs to an official government organization in the United States.

Secure .gov websites use HTTPS

A lock ( ) or https:// means you’ve safely connected to the .gov website. Share sensitive information only on official, secure websites.

وائٹ ہاؤس
16 مارچ 2016
کملا ہیرس، نائب صدرِ امریکہ
بیان

جنابِ سیکرٹری جنرل، چیئرپرسن، میڈم ایگزیکٹو ڈائریکٹر، معزز وزرا، قابل احترام شخصیات، سول سوسائٹی کے ارکان ـــ اس معزز کمیشن سے خطاب کرنا میرے لیے اعزاز ہے۔

1947 سے اس کمیشن نے خواتین کو پیش آنے والے واقعات کو جمع کیا، خواتین کے حقوق پر عالمگیر معیارات وضع کیے اور صنفی مساوات کے لیے آواز بلند کی ہے۔

یہ کام اب بھی اسی طرح اشد ضروری ہے جیسا کہ آغاز میں تھا۔

امریکہ کی جانب سے آپ کا شکریہ۔

اس سال، خواتین کے حالات، خصوصاً فیصلہ سازی میں خواتین کی شرکت سے متعلق غور کرتے ہوئے ہمیں جمہوریت کی صورتحال کو بھی دیکھنا ہو گا۔

اپنی بہترین صورت میں جمہوریت انسانی حقوق کا تحفظ کرتی ہے، انسانی وقار میں اضافہ کرتی ہے اور قانون کی حکمرانی قائم رکھتی ہے۔

یہ امن اور مشترکہ خوشحالی کے حصول کا ذریعہ ہے۔ اسے صنف سے قطع نظر ہر شہری سے مساوی سلوک یقینی بنانا چاہیے۔

اور آزادانہ و منصفانہ انتخابات، جن میں لوگوں کی رائے کا احترام کیا جائے۔

اس کے ساتھ ، جمہوریت مستقل چوکسی، مستقل بہتری کا تقاضا بھی کرتی ہے۔

یہ ہر وقت جاری رہنے والا عمل ہے۔

اور آج ہم جانتے ہیں کہ جمہوریت پر بھاری دباؤ میں اضافہ ہو رہا ہے۔

مسلسل 15 سال تک ہم نے دنیا بھر میں آزادی کی صورتحال میں پریشان کن تنزل کا مشاہدہ کیا ہے۔

درحقیقت، ماہرین یہ سمجھتے ہیں کہ گزشتہ سال دنیا بھر میں جمہوریت اور آزادی میں بگاڑ کے اعتبار سے بدترین تھا۔

اسی لیے صحت کے عالمگیر بحران اور معاشی اعتبار سے نازک حالات کا سامنا کرتے ہوئے بھی ہمارے لیے جہموریت کا دفاع جاری رکھنا ضروری ہے۔

اس مقصد کے لیے امریکہ اقوام متحدہ اور وسیع تر کثیرملکی نظام کے ساتھ اپنے تعلق کو مضبوط بنا رہا ہے۔

ہم انسانی حقوق کونسل میں بھی دوبارہ شمولیت اختیار کر رہے ہیں۔

کیونکہ ہم جانتے ہیں کہ جمہوریت کی صورتحال کا انحصار انسانی حقوق کے عالمگیر اعلامیے میں واضح کردہ اقدار سے ہماری اجتماعی وابستگی پر ہے۔

جمہوریت کی صورتحال بنیادی طور پر خواتین کو حاصل اختیار پر بھی منحصر ہوتی ہے۔

صرف اس لیے نہیں کہ فیصلہ سازی میں خواتین کو شامل نہ کرنا کمزور جمہوریت کی علامت ہے، بلکہ اس لیے بھی کہ خواتین کی شرکت سے جمہوریت مضبوط ہوتی ہے۔

یہ بات ہر جگہ صادق آتی ہے۔

دنیا بھر میں اس معاملے میں ہونے والی پیش رفت میرے لیے حوصلہ افزا ہے۔

مجھے یہ بتاتے ہوئے فخر ہے کہ اگرچہ امریکہ کو اب بھی کام کرنا ہے، مگر ہم بھی اس معاملے میں ترقی کر رہے ہیں اور خواتین ہر جگہ ہماری جمہوریت کو مضبوط بنا رہی ہیں۔

امریکہ میں گزشتہ 56 سال میں ہونے والے ہر صدارتی انتخاب میں خواتین نے مردوں سے زیادہ بڑی تعداد میں ووٹ دیا ہے۔

امریکی کانگریس میں جتنی بڑی تعداد میں خواتین موجود ہیں اتنی پہلے کبھی نہیں تھیں۔

اب جتنی بڑی تعداد میں خواتین اپنے خاندانوں کے لیے روزگار پیدا کر رہی ہیں اس کی پہلے کوئی مثال نہیں ملتی۔

اور گزشتہ ہفتے ہی، صدر نے دو خواتین کو ہماری 11 لڑاکا کمانوں میں سے دو کی سربراہی کے لیے تعینات کیا۔

امریکہ میں خواتین ہماری مقامی، ریاستی اور قومی حکومتوں میں قائدانہ کردار ادا کرتی ہیں، ہماری قومی سلامتی کے حوالے سے بڑے فیصلے لیتی ہیں اور ہماری معیشت کو نمایاں ترقی کی جانب لے جاتی ہیں۔

یہ ترقی کی علامات ہیں۔ یہ مضبوطی کی علامات ہیں۔

تاہم میرے دوستو، ہم اس ترقی کو آسان نہیں لے سکتے۔

خصوصاً موجودہ حالات میں۔

کوویڈ-19 نے ہر جگہ خواتین کے معاشی تحفظ، جسمانی سلامتی اور صحت کو خطرات سے دوچار کر دیا ہے۔

ایسے حالات میں جب خواتین خود کو درکار طبی نگہداشت کے حصول کی جدوجہد کر رہی ہیں، یہ وبا ایچ آئی وی/ایڈز، تپ دق، ملیریا، ناقص غذائیت اور زچہ بچہ کی اموات کے خلاف جنگ میں عالمی سطح پر حاصل کردہ ہماری کامیابیوں کو غارت کرتی دکھائی دیتی ہے۔

اسی لیے ہماری حکومت کے پہلے دن ہی امریکہ نے عالمی ادارہ صحت میں ایک رکن ملک اور رہنما کی حیثیت سے دوبارہ شمولیت اختیار کی۔

اور ہم اقوام متحدہ میں خواتین کے ادارے کے ساتھ اپنی شراکت کو دوبارہ مضبوط بنا رہے ہیں تاکہ دنیا بھر میں خواتین کو بااختیار بنانے میں مدد دی جا سکے۔

سچائی یہ ہے:

جب خواتین کو معیاری طبی نگہداشت کے حصول میں مشکلات کا سامنا ہوتا ہے ۔۔۔

جب خواتین کو غذائی عدم تحفظ کا سامنا ہوتا ہے ۔۔۔

جب خواتین کے غربت میں رہنے کا امکان زیادہ ہوتا ہے اور اس کے نتیجے میں وہ موسمیاتی تبدیلی سے غیرمتناسب طور سے متاثر ہوتی ہیں ۔۔۔

جب وہ صںفی بنیاد پر تشدد کے سامنے زیادہ غیرمحفوظ ہوتی ہیں اور نتیجتاً جنگی حالات ان پر غیرمتناسب طور سے اثرانداز ہوتے ہیں ۔۔۔

تو خواتین کے لیے فیصلہ سازی میں پوری طرح شرکت کرنا آسان نہیں رہتا۔

چنانچہ ایسے حالات میں جمہوریتوں کے لیے پھلنا پھولنا زیادہ مشکل ہو جاتا ہے۔

انسانی حقوق کا عالمگیر اعلامیہ تشکیل دینے والی ایلینار روزویلٹ نے ایک مرتبہ کہا تھا کہ ”مساوات کے بغیر جمہوریت ممکن نہیں۔”

دوسرے الفاظ میں، خواتین جس حال میں ہوں گی جمہوریت کا بھی وہی حال ہو گا۔

جہاں تک ہمارا کردار ہے تو امریکہ دونوں میں بہتری لانے کے لیے کام کرے گا۔

ہم اس اعلامیے میں شامل جمہوری اقدار کو قائم رکھنے کے لیے پُرعزم ہیں۔

ہم پوری طرح یقین رکھتے ہیں کہ عالمی سطح پر اکھٹے کام کر کے ہم اس اعلامیے کے بنیادی تصور کو پا سکتے ہیں۔

اس کے لیے ہم آنے والے دنوں اور سالوں میں آپ سب کے ساتھ شراکت کے متمنی ہیں۔

شکریہ۔


اصل عبارت پڑھنے کا لنک: https://www.whitehouse.gov/briefing-room/speeches-remarks/2021/03/16/pre-taped-remarks-by-vice-president-kamala-harris-as-delivered-to-the-commission-on-the-status-of-women/

یہ ترجمہ ازراہ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔

U.S. Department of State

The Lessons of 1989: Freedom and Our Future