وائٹ ہاؤس
صدر جو بائیڈن کا بیان
28 جنوری، 2024

آج امریکہ کے لوگوں کے دل غم سے بوجھل ہیں۔ گزشتہ شب شمال مشرقی اردن میں شام کی سرحد کے قریب تعینات ہماری فوج پر ڈرون حملے میں تین اہلکار ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے۔ ہم اس حملے کے بارے میں حقائق معلوم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں، لیکن ہمیں علم ہے کہ اس کا ارتکاب شام اور عراق میں ایران کی پشت پناہی میں سرگرم جنگجو گروہوں نے کیا ہے۔

جِل اور میں  قطعی طور پر اس ناجائز حملے میں ہلاک ہونے والے اپنی فوج کے بہادر ارکان کے اہلخانہ، دوستوں اور ملک بھر میں امریکی شہریوں کے غم میں شریک ہیں۔ یہ فوجی ہمارے ملک کے بہترین سپوتوں کی تجسیم تھے۔ انہوں نے ثابت قدمی دکھائی اور بہادری کا مظاہرہ کیا، استقلال سے اپنے فرائض انجام دیے، ملک سے اپنی وابستگی میں پُرعزم رہے اور اپنی جان کو خطرے میں ڈال کر اپنے ہم وطن امریکیوں اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہمارے اتحادیوں اور شراکت داروں کا تحفظ کیا۔ ہم اس جنگ میں کبھی پیچھے نہیں ہٹیں گے۔

ہم نے اپنی فوج کے جن تین ارکان کو کھویا ہے وہ حب الوطنی کی اعلیٰ ترین تعریف پر پورے اترے۔ ہماری قوم ان کی قربانی کو کبھی نہیں بھولے گی۔ ہم اُن کے خاندانوں کی طرف سے ہم پر عائد ہونے والی مقدس ذمہ داری کو باہم مل کر پورا کریں گے۔ ہم خود کو ان کی توقیر اور دلیری کا اہل ثابت کرنے کی کوشش کریں گے۔ ہم دہشت گردی کے خلاف جنگ کے لیے ان کے عزم کو آگے لے کر چلیں گے۔ بلاشبہ ہم اس واقعے کے تمام ذمہ داروں کو اپنی مرضی کے وقت پر اور انداز  سے جوابدہ ٹھہرائیں گے۔


اصل عبارت پڑھنے کا لنک: https://www.whitehouse.gov/briefing-room/statements-releases/2024/01/28/statement-from-president-joe-biden-on-attack-on-u-s-service-members-in-northeastern-jordan-near-the-syria-border/

یہ ترجمہ ازراہ نوازش مہیا کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔

U.S. Department of State

The Lessons of 1989: Freedom and Our Future