امریکی محکمہ خارجہ
ترجمان کا دفتر
وزیر خارجہ اینٹنی جے بلنکن کا بیان
یکم فروری، 2024

امریکہ نے مغربی کنارے میں استحکام اور اسرائیلیوں اور فلسطینیوں کے لیے امن و سلامتی کے یکساں امکانات کو نقصان پہنچانے کے اقدامات کی تواتر سے مخالفت کی ہے۔ ایسی کارروائیوں میں فلسطینییوں کے خلاف اسرائیلی آباد کاروں کے حملے اور اسرائیلیوں کے خلاف فلسطینیوں کے حملے شامل ہیں۔ شہریوں کے خلاف انتہاپسندانہ تشدد کا کوئی جواز نہیں خواہ اس کا تعلق کسی بھی قومیت، نسل یا مذہب سے کیوں نہ ہو۔

امریکہ مغربی کنارے میں ایسی کارروائیوں پر قابو پانے اور ان کے ذمہ داروں کا محاسبہ کرنے کے لیے متعدد اقدمات کا نفاذ کر رہا ہے۔

امریکی محکمہ خارجہ مغربی کنارے میں اسرائیل کے چار شہریوں/افراد پر لوگوں کے خلاف تشدد میں ملوث ہونے کی پاداش میں مالی پابندیاں عائد کر رہا ہے۔ یہ پابندیاں ایک نئے انتظامی حکم نامے کے تحت عائد کی گئی ہیں جو امریکہ کو شہریوں کے لیے خطرات پیدا کرنے یا انہیں تشدد کا نشانہ بنانے یا ایسے اقدامات میں کسی نہ کسی طرح ملوث ہونے، شہریوں کو ان کے گھر چھوڑنے پر مجبور کرنے کے لیے دھمکانے، ان کی املاک کو تباہ کرنے یا اس پر قبضہ کرنے یا مغربی کنارے میں دہشت گردی کا ارتکاب کرنے والے لوگوں پر مالی پابندیاں نافذ کرنے کا اختیار دیتا ہے۔

اسرائیل کو چاہیے کہ وہ مغربی کنارے میں شہریوں کے خلاف تشدد کو روکنے اور اس کے ذمہ داروں سے جواب طلبی کے لیے مزید اقدامات کرے۔ امریکہ اسرائیلیوں اور فلسطینیوں کے تحفظ، سلامتی اور وقار کو یقینی بنانے کا عزم رکھتا ہے اور اپنی خارجہ پالیسی کے مقاصد کو فروغ دینے کے لیے اقدامات اٹھانے جاری رکھے گا جن میں فلسطینی مسئلے کے دو ریاستی حل کو ممکن بنانا بھی شامل ہے۔

یہ نیا انتظامی حکم نامہ کسی بھی ایسے غیرملکی فرد پر پابندیاں لگانے کا اختیار دیتا ہے جو مغربی کنارے میں امن، سلامتی یا استحکام کے لیے خطرہ بننے والے اقدامات بشمول ایسی پالیسیوں کے نفاذ، ان پر عملدرآمد، ان کے اطلاق یا ان اقدامات کے خلاف پالیسیوں کے نفاذ میں رکاوٹ ڈالنے میں براہ راست یا بالواسطہ طور پر ملوث ہو یا اس کا ارادہ رکھتا ہو یا شہریوں کے نقصان کا سبب بننے والی مخصوص سرگرمیوں میں ملوث ہو۔


اصل عبارت پڑھنے کا لنک: https://www.state.gov/further-measures-to-promote-peace-security-and-stability-in-the-west-bank/

یہ ترجمہ ازراہ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔

U.S. Department of State

The Lessons of 1989: Freedom and Our Future