امریکی دفتر خارجہ
ترجمان کا دفتر
وزیر خارجہ اینٹنی جے بلنکن کا بیان
20 فروری، 2023

اس ہفتے یوکرین کے خلاف روس کے وحشیانہ اور بلااشتعال حملے کو ایک سال مکمل ہو رہا ہے۔

صدر پیوٹن کو فوری فتح کی توقع تھی لیکن بڑے پیمانے پر تباہی اور انسانی مصائب مسلط کرنے کے باوجود انہوں نے بنیادی طور پر یوکرین کے لوگوں کی بے پایاں جرات، مضبوط عزم اور عالمی برادری میں یوکرین کے لیے حمایت کا غلط اندازہ لگایا۔

آج صدر بائیڈن کی جانب سے تفویض کردہ اختیار کے تحت میں یوکرین کے لیے 450 ملین ڈالر مالیت کا امریکی اسلحہ اور سازوسامان جاری کرنے کی اجازت دے رہا ہوں جس کا اعلان صدر نے یوکرین کے دورے میں کیا تھا۔ یہ اگست 2021 کے بعد ایسا 32واں اجرا ہے۔ دفاعی امداد کے اس پیکیج میں امریکہ کے فراہم کردہ ہائی مارس اور ہوئٹزر کے لیے مزید گولہ بارود، جنہیں یوکرین اپنے ملک کے دفاع کے لیے موثر انداز میں استعمال کر رہا ہے اور مزید جیولن میزائل، اینٹی آرمر نظام ار فضائی نگرانی کے لیے ریڈار شامل ہیں۔ علاوہ ازیں، میں روس کے بے رحمانہ میزائل اور ڈرون حملوں میں یوکرین کے توانائی کے بنیادی ڈھانچے کو برقرار رکھنے کے لیے ہنگامی مدد کے طور پر مزید 10 ملین ڈالر مہیا کرنے کی اجازت بھی دے رہا ہوں۔

امریکہ یوکرین کے لیے عالمی تعاون بھی اکٹھا کر رہا ہے۔ اس حوالے سے ہم نے اپنے اتحادیوں اور شراکت داروں کی جانب سے غیرمعمولی یکجہتی دیکھی ہے۔ ہم ان 50 سے زیادہ ممالک کو سراہتے ہیں جو یوکرین کے ساتھ یکجہتی کے لیے اکٹھے ہوئے ہیں جو اپنی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کا دفاع کر رہا ہے۔

روس آج اکیلے یہ جنگ ختم کر سکتا ہے۔ جب تک وہ ایسا نہیں کرتا ہم میدان جنگ میں یوکرین کی فوج کو مضبوط کرنے کے لیے اس کے ساتھ متحد ہو کر کھڑے رہیں گے تاکہ وہ مستقبل میں کسی طرح کے مذاکرات کے موقع پر زیادہ سے زیادہ بہتر پوزیشن میں ہو۔


اصل عبارت پڑھنے کا لنک: https://ua.usembassy.gov/more-u-s-security-assistance-on-the-way-for-ukraine/

یہ ترجمہ ازراہ نوازش فراہم کیا جا رہا ہے اور صرف اصل انگریزی ماخذ کو ہی مستند سمجھا جائے۔

U.S. Department of State

The Lessons of 1989: Freedom and Our Future